بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

کرکٹ کھیلنا اور دیکھنا


سوال

1۔کرکٹ کھیلنا، 2۔ کرکٹ ٹی وی پر دیکھنا اور3۔ آن لائن اسکور دیکھنا کیسا ہے؟

جواب

1۔بطور ورزش کے کرکٹ کھیلنا درست ہے،البتہ کرکٹ کے کھیل کومقصود بنالینا اور اس میں مشغول ہوکر فرائض کا لحاظ نہ رکھاجائے یا رقم لگا کرکرکٹ کھیلاجائے یہ صورتیں  درست نہیں۔حضرت مولانامحمدیوسف لدھیانوی شہیدرحمہ اللہ لکھتے ہیں:

’’ کھیل کے جواز کے لیے  تین شرطیں ہیں:  ایک یہ کہ: کھیل سے مقصود محض ورزش یا تفریح ہو، خود اس کو مستقل مقصد نہ بنالیا جائے۔ دوم یہ کہ: کھیل بذاتِ خود جائز بھی ہو، اس کھیل میں کوئی ناجائز بات نہ پائی جائے۔ سوم یہ کہ: اس سے شرعی فرائض میں کوتاہی یا غفلت پیدا نہ ہو۔ اس معیار کو سامنے رکھا جائے تو اکثر و بیشتر کھیل ناجائز اور غلط نظر آئیں گے۔ ہمارے کھیل کے شوقین نوجوانوں کے لیے کھیل ایک ایسا محبوب مشغلہ بن گیا ہے کہ اس کے مقابلے میں نہ انہیں دِینی فرائض کا خیال ہے، نہ تعلیم کی طرف دھیان ہے، نہ گھر کے کام کاج اور ضروری کاموں کا احساس ہے۔ اور تعجب یہ کہ گلیوں اور سڑکوں کو کھیل کا میدان بنالیا گیا ہے، اس کا بھی احساس نہیں کہ اس سے چلنے والوں کو تکلیف ہوتی ہے۔ اور کھیل کا ایسا ذوق پیدا کردیا گیا ہے کہ ہمارے نوجوان گویا صرف کھیلنے کے لیے  پیدا ہوئے ہیں، اس کے سوا زندگی کا گویا کوئی مقصد ہی نہیں، ایسے کھیل کو کون جائز کہہ سکتا ہے․․․؟ ‘‘۔(آپ کے مسائل اور ان کا حل)

۲۔ٹی وی پرکرکٹ دیکھناجائزنہیں۔

۳۔آن لائن اسکور دیکھنے میں اگر کسی حرام کا ارتکاب نہ ہو تو مضائقہ نہیں ۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143811200004

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے