بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 شوال 1441ھ- 02 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

ایزی پیسہ اکاؤنٹ میں رقم کے بدلے ملنے والے فری منٹس کا حکم


سوال

میرے ایک ساتھی مجھے بتا رہے تھے کہ اس نے easypaisa acount بنایا ہے، جس میں اس نے ہزار روپے رکھے ہیں ، جس کی وجہ سے ہر دن اس کو کمپنی کی طرف سے 50 منٹ مفت ملتے ہیں، اور اگر آپ 2000 روپے رکھو تو ہر مہینے آپ کو 100mb نیٹ ملتا ہے، تو یہ پوچھنا ہے کہ آیا یہ مفت منٹ یا یہ مفت mb  اس کےلیےصحیح ہے؟

جواب

ایزی پیسہ اکاؤنٹ میں صارف جو رقم رکھتا ہے اس کی حیثیت قرض کی ہوتی ہے ، اور قرض دے کر اس سے نفع اٹھانا شرعاً سود ہے ؛ اس لیے مذکورہ قرض کے بدلے میں کمپنی جو فری منٹس یا فری انٹرنیٹ دیتی ہے وہ سود کے حکم میں ہیں، اور ان کا استعمال شرعاً جائز نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201418

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے