بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 ربیع الثانی 1441ھ- 07 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

محمد اجود رحمٰن نام رکھنے کا حکم


سوال

میں نے اپنے بیٹے کا نام ’’محمد اجود‘‘  رکھا ہے ۔کیا میں ’’اجود‘‘  کے ساتھ  ’’رحمان‘‘  لگا سکتا ہوں ؟

جواب

’’محمد اجود‘‘ نام درست ہے، اس کے ساتھ ’’رحمٰن‘‘ لگانا درست نہیں ہے، کیوں کہ ’’رحمٰن‘‘ نام اللہ کے ساتھ خاص ہے، مخلوق کے لیے یہ نام رکھنا جائز نہیں ہے، البتہ اگر لفظ ’’رحمٰن‘‘ سے پہلے ’’عبد‘‘ لگاکر ’’عبد الرحمٰن‘‘ نام رکھا جائے تو یہ جائز ہے، بلکہ اللہ کے ہاں  پسندیدہ ناموں میں سے ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201319

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے