بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ربیع الثانی 1441ھ- 12 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

’’سرخاب‘‘ کھانا حلال ہے یا نہیں؟


سوال

کیا سرخاب جسے انگریزی میں pheasant کہتے ہیں حلال ہے ؟

جواب

’’سرخاب‘‘ جسے عربی میں ’’حباریٰ‘‘ اور انگریزی میں ’’Bustard ‘‘ کہتے ہیں بالاتفاق حلال ہے، بلکہ خود رسول اللہ ﷺ سے سرخاب کا کھانا ثابت ہے،  باقی ’’Pheasant ‘‘ انگریزی میں ’’تیتر‘‘ کو کہتے ہیں، اس کا کھانا بھی حلال ہے۔

سنن أبي داود (3/ 354):

"باب في أكل لحم الحبارى

حدثنا الفضل بن سهل، حدثنا إبراهيم بن عبد الرحمن ابن مهدي، حدثني بريه بن عمر بن سفينة، عن أبيه، عن جده، قال: «أكلت مع رسول الله صلى الله عليه وسلم لحم حبارى»".

بذل المجهود (۵۲۲ ):

"و لحم الحبارى مجمع على حله لا أرى فيه خلافاً".فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201512

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے