بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 ربیع الثانی 1441ھ- 10 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

روزہ کی حالت میں خون کا عطیہ دینا


سوال

کیا روزے کی حالت میں خون کا عطیہ کیا جا سکتا ہے؟  اس سے روزہ ٹوٹ تو نہیں جاتا ؟

جواب

روزہ کے دوران اگر کسی مریض کو خون دینے کی ضرورت ہو تو خون دینا جائز ہے ، اس سے روزہ فاسد نہیں ہوتا، البتہ اتنا خون دینا مکروہ ہے جس سے روزے دار کو کم زوری  لاحق ہو جائے،  تاہم اس سے روزے پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔ اگر خون دینا فوری ضروری نہ ہو اور کم زوری کا اندیشہ ہو تو  روزہ افطار کے بعد خون کا عطیہ دینا چاہیے۔

فتاوی عالمگیری میں ہے:

"ولا بأس بالحجامة إن أمن على نفسه الضعف، أما إذا خاف فإنه يكره وينبغي له أن يؤخر إلى وقت الغروب".  (كتاب الصوم، الباب الثالث فيما يكره للصائم وما لا يكره: 1/199-200، ط: رشيدية) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201683

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے