بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 ربیع الثانی 1441ھ- 06 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

خواتین کے لیے روزے کے مسائل


سوال

خواتین کے لیے روزے کے مسائل کیا ہیں؟

جواب

خواتین کے لیے روزے کے عمومی مسائل وہی ہیں جو مردوں کے لیے ہیں، البتہ مخصوص ایام میں عورتیں روزہ نہیں رکھیں گی اور بعد میں ان کی قضا کریں گی۔

اسی طرح اگر عورت حاملہ ہو اور روزہ رکھنے کی صورت میں حمل یا اپنے نقصان کا اندیشہ ہو، یا عورت بچے کو دودھ پلاتی ہو اور روزہ رکھنے کی صورت میں اپنی یا بچے کی صحت متاثر ہونے کا اندیشہ ہو تو ان اعذار کی وجہ سے عورت کو روزہ چھوڑنے کی اجازت ہوگی، تاہم عذر ختم ہونے کے بعد ان روزوں کی قضا لازم ہوگی۔

اگر کسی اور جزئیے کے حوالے سے سوال مطلوب ہے تو متعلقہ جزئیہ وضاحت سے لکھ کر ارسال کردیجیے! فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200876

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے