بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ربیع الثانی 1441ھ- 12 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

تیس ہزار کمانے والے کے لیے قربانی کا کیا حکم ہے؟


سوال

ایک بندہ ہر مہینہ میں 30 ہزار روپے کماتا ہے اور ایک بی سی بھی ہے جو کہ ایک سال ہو چکا ہے، اب قربانی کا کیا حکم ہے؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں اگر اس کے پس عیدالاضحی کے دنوں میں ساڑھے باون تولہ چاندی کی قیمت کے بقدر نقدی جمع شدہ بی سی کی رقم کے طور پر موجود ہو یا ضروریاتِ  زندگی سے زائد  سامان  یا مال موجود ہو جس  کی مالیت ساڑھے باون تولہ چاندی کی مالیت کے مساوی ہو تو ایسی صورت میں مذکورہ شخص پر قربانی کرنا واجب ہوگا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012200180

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے