بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

26 جُمادى الأولى 1441ھ- 22 جنوری 2020 ء

دارالافتاء

 

کفار کی نابالغ اولاد کا حکم


سوال

یہودی اور عیسائی بچے جو بچپن میں فوت ہو جاتے ہیں، وہ جہنم میں جائیں  گے یا جنت میں؟

جواب

احادیث  اس بارے میں مختلف ہیں، اسی وجہ سے علماء کی آراء بھی اس بارے میں مختلف ہیں، بعض علماء نے فرمایا کہ : اگربلوغت کے بعد ان کا مسلمان ہونا اللہ کے علم میں ہوگا تو جنت میں جائیں گے اور اگربلوغت کے بعد ان کاکافرہونا اللہ کے علم میں ہوگا تو وہ جہنم میں جائیں گے۔ البتہ امام نووی رحمہ اللہ اور دیگرمحققین نے اس کوراجح قراردیاہے کہ اولادکفارجوبلوغت سے پہلے دنیاسے چل بسے وہ اہل جنت میں سے ہیں۔

مفتی اعظم پاکستان مفتی محمد شفیع رحمہ اللہ لکھتے ہیں:

’’آیت’’ولاتزر وازرۃ وّزرَ اخریٰ ‘‘کے تحت تفسیرمظہری میں لکھاہے کہ اس آیت سے ثابت ہوتاہے کہ مشرکین وکفارکی اولاد جوبالغ ہونے سے پہلے مرجائیں ان کو عذاب نہ ہوگا؛ کیوں کہ ماں باپ کے کفرسے وہ سزاکے مستحق نہیں ہوں گے"۔(معارف القرآن5/457،ط:مکتبہ معارف القرآن)[فتاویٰ دارالعلوم دیوبند12/211،ط:دارالاشاعت کراچی]

امام ابوحنیفہ رحمہ اللہ نے تعارض ادلہ  کی وجہ سے نیز احادیث کی روشنی میں اس بارے میں توقف کیاہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143607200012

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے