بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

کاروبار میں نفع متعین کرکے دینا


سوال

پراپرٹی کے کاروبار میں ایک طریقہ کار یہ چل رہا ہے کہ :آج کل  انوسٹر کچھ لوگوں سے یہ ڈیل  کرلیتا ہے کہ:  پانچ یا دس لاکھ لگادو ،اورپھر ایک یا دو لاکھ فکس نفع ملے گا، خواہ فائدہ ہو یا نقصان، عموما فائدہ ہی ہوتا ہے، اس طرح بزنس کیا جاسکتا ہے؟

جواب

یہ معاملہ خالص سودی ہے، ہونا یہ چاہیے  کہ : جو رقم لگائی جائے  اس  کے حصے میں کل جتنا منافع آتا ہے اس  نفع کاکچھ حصہ مثلاً: نصف یا تہائی رقم لگانے والے  کو دیا جائے گا تو  جائز ہوگا ، نفع فکس کرکے دیا جائے تو جائز نہیں ۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143810200015

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے