بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

21 ذو الحجة 1441ھ- 12 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

ڈرائیور کے لیے نمازِ قصر کا حکم


سوال

ڈرائیور حضرات کے لیے حالتِ سفر میں نماز کا کیا حکم ہے؟ تفصیل سے بتادیں!

جواب

ایسے ڈرائیور حضرات  جو مستقل سفر میں رہتے ہیں  اور ان کا قصد  سواستتر کلومیٹر سے زائد کاہوتا ہے، وہ اپنےشہر کی حدود سے نکلنے کے بعد  مسافر کہلائیں گے اوردورانِ سفر قصر نماز ہی پڑھیں گے، البتہ اگر کسی مقیم امام کی اقتدا میں نماز پڑھیں گے تو پوری نماز پڑھیں گے، اور  جیسے ہی یہ اپنے شہر کی آبادی  میں داخل ہوں گے، پھرمکمل نماز پڑھیں گے۔

الفتاوى الهندية (1 / 139):
"ولايزال على حكم السفر حتى ينوي الإقامة في بلدة أو قرية خمسة عشر يوماً أو أكثر، كذا في الهداية".
 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107200277

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں