بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

8 شوال 1441ھ- 31 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

چالیس ہزار بی سی کی مد میں جمع ہوں تو قربانی کے وجوب کا کیا حکم ہے؟


سوال

میں نے ایک لاکھ کی بی سی لگائی ہوئی ہے اور تقریباً چالیس ہزار تک کی ادائیگی کر دی ہے اور نقد مال و دولت کچھ نہیں ہے.ہر مہینے کماتا ہوں اور خرچ کرتا ہوں. مجھ پر قربانی واجب ہوگی؟

جواب

آج کل ساڑھے باون تولہ چاندی کی مالیت چالیس ہزار روپے سے کم ہے، اگر  عید الاضحیٰ کے دنوں میں مذکورہ رقم آپ کی ملکیت میں باقی ہو اور چاندی کی قیمت بڑھے نہیں تو  آپ پرقربانی واجب ہوگی، اگر پوراجانور خریدنے کی استطاعت نہیں ہے تو کسی مناسب  جگہ اجتماعی قربانی میں اپنا ایک حصہ ڈال دیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201767

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے