بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

27 جُمادى الأولى 1441ھ- 23 جنوری 2020 ء

دارالافتاء

 

پرانی مسجد کی زمین بیچ کر دوسری جگہ نئی مسجد بنانے کا حکم


سوال

 ایک محلے میں قدیم مسجد ہے آبادی بڑھنے  کی وجہ سے وہ مسجد نمازیوں کے  لیے ناکافی ہے،  توسیع کی بھی گنجائش نہیں تو  کیا یہ جائز ہے کہ اس جگہ کو فروخت کر کے دوسری جگہ خرید کر وہاں مسجد بنائی جائے؟

جواب

جس زمین پر ایک مرتبہ شرعی مسجد بن جائے،  قیامت تک وہ جگہ مسجد ہی رہے گی، اب اس زمین کا بیچنا اور اس جگہ سے مسجد ختم کر کے کچھ اور بنانا جائز نہیں ہے۔ آبادی بڑھنے کی وجہ سے پہلی مسجد میں جگہ ناکافی ہے اور مذکورہ مسجد کی توسیع ممکن نہیں ہے تو دوسری جگہ خرید کر  نئی مسجد بنالی جائے، اور دونوں میں جماعت سے نماز ادا ہوتی رہے اس میں حرج نہیں ہے۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200319

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے