بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

کیا اولاد کی موجودگی میں پوتے کا میراث میں حصہ ہوگا؟


سوال

 اگروالد کی حیاتی میں بیٹے کا انتقال ہوجائے، تواس کے بچوں  کا وراثت میں کیا حق ہے؟

جواب

والد کی حیات (زندگی) میں جس بیٹے کا انتقال ہوجائے اس بیٹے کی اولاد کا اپنے دادا کی میراث میں شرعی حصہ نہیں ہوتا جب کہ دادا کی وفات کے وقت کوئی اور بیٹا زندہ ہو۔ البتہ آدمی کے لیے اپنے مال میں ایک تہائی ترکہ تک وصیت کی شرعاً اجازت ہوتی ہے، لہٰذا پوتوں کے ضرورت مند ہونے کی صورت میں دادا کو ایسے پوتوں اور پوتیوں کے حق میں ایک تہائی کے اندر اندر کچھ وصیت کر کے جانا چاہیے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201516

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے