بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 صفر 1442ھ- 01 اکتوبر 2020 ء

دارالافتاء

 

نکاح کے لیے لڑکی کے نام زمین یا مکان کرنے کا مطالبہ کرنا


سوال

ایک جگہ رشتے کی بات چل رہی ہے، لیکن لڑکی والوں کی طرف سے اصرار ہے کہ پہلے کوئی زمین یا مکان لڑکی کے نام کریں، پھر نکاح کریں گے،  کیا ایسا کرنا درست ہے؟

جواب

اگر لڑکی والے مہر کے طور پر  لڑکے سے مکان یا زمین کا مطالبہ کررہے ہیں تو یہ درست ہے، اگر لڑکے والے اس پر راضی نہیں ہیں تو کسی اور مہر پر لڑکی والوں کو راضی کرلیں، بصورتِ دیگر ان کو یہ حق ہے کہ وہ نکاح نہ کریں،اور اگر لڑکی والوں کا مطالبہ مہر کے علاوہ ہو تو  انہیں یہ حق نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144106200756

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں