بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 16 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

نکاح کے بعد خلوت صحیحہ سے قبل طلاق کی صورت میں نصف مہر لازم ہے


سوال

کیا نکاح کے بعد اگر رخصتی سے پہلے طلاق ہو جائے تو مرد کیلے مہر دینا لازم ہے یا نہیں؟ کیوں کہ ابھی تک صرف نکاح ہوا تھا رخصتی اور خلوت نہیں ہوئی تھی کہ طلاق ہو گئی۔

جواب

نکاح کے بعد رخصتی اورخلوتِ صحیحہ سے قبل طلاق دینے کی صورت میں مقررہ مہر کا نصف (آدھا) دینا لازم ہے۔جیساکہ "قرآن کریم" میں ہے:

''اور اگر تم ان بیبیوں کو طلاق دو قبل اس کے کہ ان کو ہاتھ لگاؤ اور ان کے لیے کچھ مہر بھی مقرر کر چکے تھے تو جتنا مہر تم نے مقرر کیا ہو اس کا نصف (واجب ہے)''۔(البقرۃ:237)فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200197

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے