بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ومابدلواتبدیلا کی جگہ الا تبدیلا پڑھنا


سوال

امام صاحب نے نماز میں  آیت ﴿ وَمَا بَدَّلُوْا تَبْدِیْلًا﴾ (الأحزاب) کو  « وما بدلوا إلا تبديلا» پڑھ لیا۔ اس سے  نماز پر کیا فرق پڑے گا ؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں امام نے اگر نماز میں  آٰیت ﴿مِنَ الْمُؤْمِنِينَ رِجَالٌ صَدَقُوْا مَا عَاهَدُوا اللّٰهَ عَلَيْهِ فَمِنْهُمْ مَّنْ قَضَى نَحْبَهٗ وَمِنْهُمْ مَّنْ يَّنْتَظِرُ وَمَا بَدَّلُوْا تَبْدِيْلًا﴾ (الأحزاب۔23)  میں  ﴿ وَمَا بَدَّلُوْا تَبْدِیْلًا﴾  کے بجائے  «وما بدلوا إلا تبديلا» پڑھ لیا اور اسی رکعت میں اس کو دوبارہ صحیح  بھی نہیں کیا  تو اس سے معنی میں  کلام اللہ کی مراد کے خلاف ہونے کی وجہ سے تغیر فاحش ہوگیا ہے ، اس سے نماز فاسد ہوجائے گی، اس کا اعادہ لازم ہوگا۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (1/ 632)
"ولو زاد كلمةً أو نقص كلمةً أو نقص حرفاً، أو قدمه أو بدله بآخر نحو ﴿من ثمره إذا أثمر﴾ واستحصد ، ﴿تعالى جد ربنا﴾ ، انفرجت بدل ﴿انفجرت﴾،  إياب بدل ﴿أواب﴾ لم تفسد، ما لم يتغير المعنى.

(قوله: ولو زاد كلمةً) اعلم أن الكلمة الزائدة إما أن تكون في القرآن أو لا، وعلى كل إما أن تغير أو لا، فإن غيرت أفسدت مطلقاً، نحو : ﴿وَعَمِلَ صٰلِحاً﴾ [البقرة: 62]- وكفر - ﴿فَلَهُمْ اَجْرُهُمْ﴾ [البقرة: 62]، ونحو: ﴿وَاَمَّا ثَمُوْدُ فَهَدَيْنَاهُمْ﴾ [فصلت: 17] "وعصيناهم"، وإن لم تغير، فإن كان في القرآن نحو: ﴿وَبِالْوَالِدَيْنِ اِحْسَاناً﴾ [الإسراء: 23]- "وبراً" لم تفسد في قولهم، وإلا نحو : "فاكهة" و"نخل" ، و"تفاح"،  و "رمان"، وكمثال الشارح الآتي لاتفسد. وعند أبي يوسف تفسد؛ لأنها ليست في القرآن، كذا في الفتح وغيره".فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144001200171

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے