بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 ربیع الثانی 1441ھ- 08 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

میڈیا چینل میں نوکری کا حکم


سوال

میڈیا چینل میں ملازمت کرنے والے کی کمائی کا کیا حکم ہے؟

جواب

میڈیا چینل  سے اگر سائل کی مراد الیکٹرانک میڈیا ہو تو ایسے چینل میں ملازمت کرناجائز نہیں، کیوں کہ یہ شعبہ جان دار کی تصویر سازی اور موسیقی وغیرہ جیسے شرعی ممنوعات سے پاک نہیں ہے۔

اور اگر اس سے مراد پرنٹ میڈیا ہو اور ملازمت کا تعلق تصویر سازی سے نہ ہو، بلکہ حقائق پر  مبنی خبروں کی تشہیر سے  ہو تو ایسی صورت میں ملازمت جائز ہوگی، اور تنخواہ بھی حلال ہوگی۔ البتہ اگر ملازمت کا تعلق تصویر سازی یا جھوٹی خبروں کی تشہیر، بہتان طرازی، بلیک میلنگ جیسے حرام کاموں سے ہو تو اس صورت میں نہ ملازمت جائز ہوگی اور نہ ہی تنخواہ حلال ہوگی۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200055

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے