بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

5 شوال 1441ھ- 28 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

مغرب کی اذان کے بعد کچھ دیر جماعت کے لیے کچھ وقت انتظار کرنا


سوال

مغرب کی اذان کے بعد اکثر مساجد میں کچھ منٹ جماعت کے لیے انتظار کیا جاتا ہے. کیا یہ عمل درست ہے یا فوراً جماعت شروع کرنی چاہیے؟

جواب

مغرب کی  نماز اور اذان میں  ایک بڑی آیت یا تین مختصر آیات کی تلاوت کے بقدر  وقفہ کرکے نماز پڑھ لینا افضل ہے۔اور جتنی دیر میں دو رکعت ادا کی جاتی ہیں  یا اس سے   زیادہ  تاخیر کرنا مکروہِ تنزیہی ہے، اس کا معمول بنانا درست نہیں ہے، اور  بغیر عذر کے اتنی تاخیر کرنا کہ ستارے چمک جائیں  مکروہِ تحریمی(ناجائز) ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144106201162

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے