بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 شوال 1441ھ- 02 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

مسنون دعاؤں کے شروع میں بسم اللہ پڑھنا


سوال

کیا روز مرّہ کی دعاؤں مثلاً سواری کی، کھانے کی، سونے سے پہلے کی وغیرہ , ان دعاؤں سے پہلے بسم اللہ پڑھنا سنت یا بہتر ہے؟

جواب

روزہ مرہ کی یا مختلف اوقات کی جو دعائیں احادیث  میں منقول ہیں ان میں سے جن دعاؤں کے ساتھ باسم اللہ پڑھنا منقول نہیں ان میں بسم اللہ نہ پڑھی جائے، بلکہ جن الفاظ میں وہ دعائیں منقول ہیں انہی الفاظ کے ساتھ پڑھی جائیں۔  البتہ  ہر  اچھے کام کے شروع میں بسم اللہ پڑھنا چوں کہ مستحسن  ہے؛  اس لیے اس نیت سے کوئی پڑھ لے توحرج نہیں ۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200571

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے