بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

مرد و خاتون اگر انفرادی نماز ادا کر رہے ہوں تو کیا محاذات کا اعتبار ہوگا؟


سوال

اگر گھر میں دو لوگ نماز پڑھ رہے ہوں ان میں سے ایک مرد اور دوسری عورت ہو، دونوں الگ الگ کمروں میں نماز ادا کر رہے ہوں، مگر دونوں کمرے برابر برابر ہوں، یعنی دیوار ملی ہوئی ہو،  تو کیا نماز ہوجائے گی؟

جواب

صورتِ  مسئولہ میں مرد و خاتون دونوں کی نماز درست ہے، ملحوظ رہے کہ مرد اور خاتون کی برابر یا قریب قریب (یعنی محاذات میں)  کھڑے ہوکر نماز اس وقت صحیح نہیں ہوتی جب کہ  محاذات کی شرائط پائی جائیں، من جملہ ان کے یہ بھی ہے کہ وہ جماعت سے نماز ادا کرہے ہوں، انفرادی طور پر نماز ادا کرنے کی صورت میں محاذات کا اعتبار نہیں۔اسی طرح اگر مرد و عورت کے درمیان دیوار ہو اور دونوں الگ الگ کمرے میں ہوں تو (اگرچہ دونوں ایک جماعت میں شریک ہوں تب) بھی نماز درست ہوجائے گی. فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144001200127

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے