بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 شوال 1441ھ- 04 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

لڑکی کا موبائل یا ڈیجیٹل کیمرہ سے تصویر بنوانے کا حکم


سوال

کسی لڑکی کے لیے موبائل یا ڈیجیٹل کیمرہ میں تصاویربنوانا کیسا ہے؟

جواب

موبائل یا ڈیجیٹل کیمرہ سے تصویر بنوانا بھی ایسے ہی ناجائز ہے جس طرح عام کیمرے سے تصویر بنوانا ناجائز ہے، چاہے لڑکی تصویر بنوائے یا لڑکا بنوائے، دونوں ہی ناجائز ہیں، البتہ لڑکی کا تصویر بنوانا بوجہ فتنہ کے زیادہ خطرناک ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144106200261

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں