بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

12 شوال 1441ھ- 04 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

قعدہ اخیر بھول کر پانچویں رکعت کے لیے کھڑا ہوا، پھر لوٹ کر قعدہ اخیرہ اور سجدہ سہو کرلیا


سوال

امام صاحب چار رکعت والی نماز میں آخری رکعت میں بیٹھنے کی بجائے مکمل قیام کرلیں اور پھر مقتدیوں کے لقمہ سے واپس التحیات میں آجائیں اور پھر سجدہ سہو کرلیں تو کیا نماز ہوجائے گی؟

جواب

جب امام آخری قعدہ میں بیٹھنے کے بجائے کھڑا ہوگیا اور قیام سے مقتدیوں کے لقمہ دینے سے قعدہ اخیرہ کی جانب پلٹ آیا اور سجدہ سہو کرکے نماز مکمل کرلی تو نماز درست ہوجائے گی،اعادے کی ضرورت نہیں ۔

الفتاوى الهندية (1/ 129):

"رجل صلى الظهر خمساً وقعد في الرابعة قدر التشهد إن تذكر قبل أن يقيد الخامسة بالسجدة أنها الخامسة عاد إلى القعدة وسلم، كذا في المحيط. ويسجد للسهو، كذا في السراج الوهاج". فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144104200898

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں