بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 شوال 1441ھ- 05 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

قربانی کے لیے جانور خریدنے کے بعد فروخت کرنا


سوال

اگر کسی شخص نے ایک قربانی خریدی، پھر اس کا اچھاریٹ ملنے پر بیچنا چاہے تو کیا اب وہ اس کو بیچ سکتا ہے؟

جواب

قربانی کے لیے جانور خریدنے کے بعد اس کو فروخت کرنا مناسب نہیں، تاہم اگر فروخت کرکے دوسرا جانور اسی قیمت کا یا اس سے زیادہ قیمت کا خریدا تو یہ جائز ہے۔ اگر پہلے جانور سے کم قیمت کا جانور خریدا ہے تو اس میں جو نفع ہوا ہے وہ نفع صدقہ کردینا ضروری ہے۔

الفتاوى الهندية - (5 / 302):
"وَلَوْ بَاعَ الْأُضْحِيَّةَ جَازَ ... وَيَشْتَرِي بِقِيمَتِهَا أُخْرَى وَيَتَصَدَّقُ بِفَضْلِ مَا بَيْنَ الْقِيمَتَيْنِ". 
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012200239

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں