بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

فجر کے بعد روزے کی نیت کرنے سے روزے کا حکم


سوال

رات 12 بجے  طبیعت خراب تھی اور سحری کے لیے بھی جب اٹھایا تو میں نے کہا کہ میں روزہ نہیں رکھ سکتا. لیکن جب فجر کی نماز کے بعد جاگ آئی تو وضو کرکے نماز پڑھ لی. اور ساتھ میں روزہ کی نیت کی،  اب میرا روزہ ہوگا کہ نہیں؟  12 بجے  کے بعد کچھ کھایا پیا نہیں؟

جواب

اگر کوئی شخص رمضان میں  رات سے روزے  کی نیت نہیں کر سکا تو اس کے لیے حکم یہ ہے کہ وہ نصفِ نہارِ شرعی (شرعی طور پر آدھا دن ہونے ) سے پہلے روزے کی نیت کر لے، اگر کوئی شخص اس وقت سے پہلے روزے کی نیت کر لے گا تو اس کا روزہ درست ہو جائے گا؛  لہذا جب آپ نے فجر کی نماز پڑھی اور روزے کی نیت کر لی اور صبح صادق کے بعد سے پورا دن کچھ نہیں کھایا پیا تو آپ کا روزہ درست ہو گیا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201015

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے