بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

18 ربیع الثانی 1441ھ- 16 دسمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عورت کو اگر آدھے روزے سے پہلے حیض آجاے تو روزہ کا حکم


سوال

عورت کو اگر آدھے روزے سے پہلے حیض آجائے  تو روزہ ٹوٹ جاتاہے یانہیں؟ نیز اگر ٹوٹ جاتا ہے تو وہ کھا پی سکتی ہے؟ اگرآدھے روزے کے بعد حیض آئے تو عورت کھا پی سکتی ہے یا وہ روزے داروں کی طرح روزہ پورا کرے؟

جواب

روزہ کی حالت میں حیض شروع ہوجانے سے روزہ فاسد ہوجاتا ہے، ایسی عورت کے لیے کھانا پینا جائز ہے، البتہ اس کو چاہیے کہ دوسروں کے سامنے نہ کھائے۔

فتاوی عالمگیری میں ہے :
"وإذا حاضت المرأة أو نفست أفطرت، کذا في الهدایة". (الفتاوی الهندیة، جلد اول، صفحه 228 دارالکتب العلمیة بیروت لبنان) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201066

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے