بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

14 ذو الحجة 1441ھ- 05 اگست 2020 ء

دارالافتاء

 

عمرہ کے سفر میں حرم یا مسجدِ نبوی کی حدود میں بیوی سے ہم بستری کرنے کا حکم


سوال

 کیا عمرے کے دنوں میں حرم کی حدود  یا مسجدِ نبوی کی حدود میں اپنی بیوی سے ہم بستری کرنا جائز ہے یا ناجائز ؟

جواب

احرام کی حالت میں کسی بھی جگہ بیوی سے ہم بستری کرنا جائز نہیں ہے، البتہ عمرہ کے سفر میں جس وقت احرام کی حالت نہ ہو اس وقت بیوی سے ہم بستری کرنا جائز ہے، لیکن مسجدِ حرام اور مسجدِ نبوی سمیت کسی بھی مسجد  کی حدود میں کسی بھی حالت میں ہم بستری کرنا جائز نہیں ہے۔ اِحرام کی حالت نہ ہو تو مسجدِ حرام کی حدود سے باہر حرم کی حدود میں، اسی طرح مسجدِ نبوی کی حدود سے باہر مدینہ منورہ کی حدود کے اندر اپنی بیوی سے ہم بستری کرنا جائز ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144105200432

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں