بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 25 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

عشاء کی نماز تاخیر سے پڑھنا


سوال

عشاء کی نماز اگر رات 2بجے پڑھی جائے تو ہو جاتی ہے؟

جواب

شفقِ ابیض کے ختم ہونے کے بعد عشاء کا وقت شروع جاتا  ہے، اور صبح صادق تک عشاء کا وقت باقی رہتا ہے، لہذا اس درمیان جب بھی عشاء کی نماز پڑھی جائے گی تو وہ ادا کہلائے گی اور نماز ہوجائےگی۔ البتہ  عشاء کی نماز کا وقت ہوتے ہی تہائی رات تک پڑھ لینی چاہیے، یہ مستحب وقت ہے، اور  (بلاعذر) آدھی رات کے بعد عشاء  کی نماز پڑھنا مکروہِ تحریمی ہے۔ فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144104200695

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے