بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 20 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عذر کی وجہ سے روزہ توڑنے پر کفارے کا حکم


سوال

ایک آدمی کو ڈاکٹر نے Kidney  میں تکلیف کی وجہ سےروزہ رکھنے سے منع کیا تھا، لیکن اس نے پھر بھی روزہ رکھ لیا، جب پیشاب میں تکلیف ہوئی تو اس نے پانی پی کر روزہ توڑ لیا، اب کیا اس کو ساٹھ روزے رکھنا ہوں گے؟

جواب

اگر مذکورہ شخص  واقعۃً  سخت تکلیف میں تھا اور پانی نہ پینے سے تکلیف بڑھ جانے کا خدشہ تھا؛ اس لیے  اس نے  پانی پیا  تو ایسے شخص پر اس روزے کی صرف قضا لازم ہو گی، کفارہ (60 روزے) لازم نہ ہو گا۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200590

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے