بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

سوتیلے والد کو باپ کہہ کر پکارنا


سوال

 کیا کوئی شخص اپنے ماں کے شوہر کو باپ کے نام سے پکار سکتے ہیں اگر نہیں تو ان کو کس نام سے پکارا جائے؟

جواب

جی ہاں! سوتیلا والد اگر چہ حقیقی والد نہیں لیکن اُس  کو باپ کہہ کر پکارنا جائز ہو گا، اس میں کوئی حرج نہیں، لیکناس بات کا خیال رکھنا ضروری ہے کہ عمومی تاثر ایسا نہ ہو کہ لوگ یہ سمجھیں کہ یہ ہی اس کا والد ہے، اسی طرح کاغذات میں بھی والد کے خانے میں حقیقی والد کا نام درج کرنا ہی ضروری ہو گا، سوتیلے والد کا نام درج کرنا جائز نہیں ہو گا۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200391

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے