بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

4 شوال 1441ھ- 27 مئی 2020 ء

دارالافتاء

 

سالی سے زنا کی صورت میں زانی کے بچوں کا سالی کے بچوں سے رشتہ کا حکم


سوال

ایک شخص نے اپنی سالی کے ساتھ زنا کیا، اب وہ اپنے بچوں کا نکاح اپنی سالی کے بچوں کے ساتھ کر سکتا ہے کہ نہیں؟

جواب

زنا‘‘  کبیرہ گناہوں میں سے سخت ترین گناہ ہے، مذکورہ شخص کو اس پر سچے دل سے توبہ و استغفار اور آئندہ سالی سے مکمل پردے کا اہتمام کرنے کی ضرورت ہے۔

باقی زانی اور مزنیہ کی اولاد کا آپس میں نکاح ہوسکتا ہے جب کہ کوئی اور محرمیت کارشتہ نہ ہو ؛ لہٰذا مذکورہ بالا صورت میں مذکورہ شخص کے بچوں کا اس کی سالی کے بچوں سے نکاح جائز ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (3 / 32):
"ويحل لأصول الزاني وفروعه أصول المزني بها وفروعها". 
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144107200723

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے