بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

روزے کا فدیہ کب دیں؟


سوال

روزے کا فدیہ کب دیں؟ ایک بندے کے پاس پیسے نہیں ہیں تو کیا وہ عید کے دو, تین ماہ بعد تک پیسے آ جائیں تو اس وقت دےسکتا ہے؟

جواب

فی الحال مال نہ ہونے کی وجہ سے اگر فدیہ تاخیر  سے ادا کیا تو ادا ہوجائے گا، البتہ مال آتے ہی فوراً ادا کرنا چاہیے، مال ہوتے ہوئے تاخیر درست نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200224

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے