بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 18 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

دکان پر خیر و برکت کے لیے قرآن پڑھنا اور اُس پر اُجرت لینا


سوال

دکان پر خیر و برکت کے لیے قرآن پڑھنا اور اُس پر اُجرت لینا کیسا ہے؟

جواب

دکان پر خیر و برکت کے لیے قرآن پڑھنا اور اُس پر اُجرت لینا جائز ہے، اس کی نظیر علاج معالجہ کی غرض سے قرآنِ پاک پڑھ کر اجرت لینا ہے، جس کی تصویب حدیثِ پاک میں موجود ہے۔ (فتاویٰ جامعہ)

عمدة القاري شرح صحيح البخاري (12/ 95):
"وقال ابن عباس عن النبي صلى الله عليه وسلم: أحق ما أخذتم عليه أجراً كتاب الله". 
 فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200803

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے