بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

15 ذو الحجة 1442ھ 26 جولائی 2021 ء

دارالافتاء

 

تین بیٹیوں میں وراثت کی تقسیم


سوال

میت کی صرف تین بیٹیاں ہیں،  ان کی میراث کیسے تقسیم ہوگی ؟میت کااور کوئی نہیں ہے۔

جواب

اگر مذکورہ میت کی کوئی نرینہ اولاد نہیں، نیز میت کے بھائی، یا بھائیوں  کی کوئی اولاد(بھتیجے وغیرہ) بھی زندہ نہ ہوں، اور میت کے چچا یا چچا کی کوئی اولاد بھی حیات نہ ہو تو اس صورت میں میت کا ساراترکہ تینوں بیٹیوں میں برابر تقسیم کیاجائے گا۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200942

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں