بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

10 شوال 1441ھ- 02 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

بیعت کی ضرورت


سوال

زید جن سے بیعت تھا ان کے انتقال کو ایک عرصہ گزر چکا ہے، اس عرصے میں زید ابھی تک بیعت نہیں ہوا   تو آیا اس صورت میں زید کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑےگا؟ کیا شریعت میں اس کوئی حقیقت ہے؟( یہ بیعت تزکیہ نفس ہے )

جواب

موجودہ پرفتن دور میں بہتر یہی ہے کہ کسی مستند شیخ سے بیعت ہوجائے تاکہ  ان کی صحبت کی برکت سے اللہ پاک فتنوں سے محفوظ رکھیں، لیکن اگر بیعت نہیں ہوتا اور دین کے اوامر و نواہی کی رعایت کر کے زندگی گزارتا ہے تو ایسا ضروری نہیں کہ اس کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا، بہرحال بیعت ہوجانا بہتر ہے، ورنہ کم از کم کسی اللہ والے سے مشاورت اور اصلاح کا تعلق قائم رکھے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200717

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے