بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

9 شوال 1441ھ- 01 جون 2020 ء

دارالافتاء

 

بہو کا اپنے سسر کو دبانے اور جسمانی خدمت کرنے کا حکم


سوال

بہو کا اپنے سسر کو دبانا ، خدمت کرنا جائز ہے؟ حوالہ کے ساتھ جواب مرحمت فرمائیں!

جواب

احتیاط کا تقاضہ یہ ہے کہ بہو اپنے سسر کی جسمانی خدمت سے احتراز کرے؛ کیوں کہ ذرا سے بے احتیاطی کی وجہ سے بہو اپنے شوہر پر ہمیشہ کے لیے حرام ہوسکتی ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (6 / 369):
"(قوله: والصهرة الشابة) قال في القنية: ماتت عن زوج وأم فلهما أن يسكنا في دار واحدة إذا لم يخافا الفتنة، وإن كانت الصهرة شابةً  فللجيران أن يمنعوها منه إذا خافوا عليهما الفتنة اهـ. وأصهار الرجل كل ذي رحم محرم من زوجته على اختيار محمد، والمسألة مفروضة هنا في أمها، والعلة تفيد أن الحكم كذلك في بنتها ونحوها، كما لايخفى". 
فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144105200341

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاش

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے نیچے کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے۔

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے