بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 12 نومبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ایسی انگوٹھی جس پر قرآن پاک کی آیات لکھی ہوں اور اس پر شیشہ بھی چڑھا ہوا ہو کو بیت الخلا لے کر جانے کا حکم


سوال

منقش انگوٹھی جس پر آیاتِ  قرآنیہ لکھی ہوں  اور اس پر شیشہ بھی چڑھا ہو،  آیا اس کو بیت الخلا  میں لے کر جانا درست ہے یا نہیں؟

جواب

ایسی انگوٹھی جس پر قرآنِ  پاک کی آیات لکھی ہوں اور اس پر شیشہ بھی چڑھا ہوا ہو،  لیکن شیشہ کے اندر سے قرآنِ  پاک کی آیات نظر آتی ہوں   کو  بیت الخلا  لے کر جانا درست نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144012201311

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے