بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

22 جمادى الاخرى 1441ھ- 17 فروری 2020 ء

دارالافتاء

 

ازواجِ مطہرات کے ساتھ مسلمانوں کا رشتہ


سوال

امہات المومنین رضی اللہ عنہن کا ذکر ہمیں کس طرح کرنا چاہیے؟ یعنی ان کا لقب کیا ہے؟ اور مسلمانوں سے ان رشتہ کیا ہے؟ 

جواب

رسولِ اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی  تمام ازواج رضی اللہ عنہن کو ازواجِ مطہرات کہا جاتا ہے، اور قرآنِ مجید نے انہیں اُمہات المؤمنین یعنی اہلِ ایمان کی مائیں کہہ کر مخاطب کیا ہے۔(احزاب: 6)   اہلِ سنت والجماعت کے عقیدے کے مطابق  ازواجِ  مطہرات، تمام مؤمنین کی مائیں ہیں؛ کیوں کہ جن عورتوں سے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے عقدِ نکاح  فرمایا ہے، وہ اپنی چاہت سے نہیں، بلکہ اللہ تعالیٰ کے حکم سے آپﷺ نے ان سے نکاح کیا تھا، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی وفات کے بعد کسی کے لیے بھی ان میں سے کسی سے نکاح جائز نہ تھا، لہذا ان امہات المؤمنین کے ساتھ عقیدت ومحبت کا رشتہ رکھنا مسلمانوں پر لازم ہے۔

"{وأزواجه أمهاتهم} في تعظيم حقهن وتحريم نكاحهن على التأبيد، لا في النظر إليهن والخلوة بهن؛ فإنه حرام في حقهن، كما في حق الأجنبيات، قال الله تعالى: {وإذا سألتموهن متاعًا فسئلوهن من وراء حجاب}، ولايقال لبناتهن: أخوات المؤمنين، ولا لإخوتهن وأخواتهن أخوال المؤمنين وخالاتهم. قال الشافعي: تزوج الزبير أسماء بنت أبي بكر وهي أخت أم المؤمنين عائشه، ولم يقل هي خالة المؤمنين. قلت: وزوج رسول الله صلى الله عليه وسلم بناته بعلي وعثمان. قال البغوي: روى الشعبي عن مسروق أن امرأة قالت لعائشة: يا أمه، فقالت: لست لك بأم؛ إنما أنا أم رجالكم. وكذا أخرج البيهقي في سننه. فبان بهذا أنه تعالى أراد تحريم النكاح. وفي قراءة أبي بن كعب ’’وأزواجه أمهاتهم وهو أب لهم‘‘، يعني في الدين، فإن كل نبي أب لأمته من حيث أنه أصل فيما به الحيوة الأبدية، ولذلك صار المؤمنون إخوة، {وأولوا الأرحام بعضهم أولى ببعض في كتاب الله} أي في حكم الله أو في اللوح المحفوظ أو في القران، وهو هذه الآية أو آية المواريث يعني في التوارث". [التفسير المظهري: ٧/ ٢٨٦]فقط واللہ اعلم 


فتوی نمبر : 144104200492

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔ سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے