بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 19 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

عاق نامے کی شرعی حیثیت


سوال

ہم آئے دن اخبارات میں ’’عاق نامہ‘‘ کا اشتہار پڑھتے ہیں۔ کیا والد کو یہ حق ہے کہ وہ اپنے نافرمان بیٹے کو اپنی وراثت سے محروم کر دے؟ بعض لوگ محض ڈرانے دھمکانے کے لیے ایسا کرتے ہیں، کیا یہ بھی نا جائز ہے؟

جواب

عاق نامے کی شرعی کوئی حیثیت نہیں اس سے کوئی شخص میراث سے محروم نہیں ہوسکتا لھذا اس سے ڈرانا دھمکانا بھی بے فائدہ ہے-


فتوی نمبر : 143101200651

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے