بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1440ھ- 19 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

کیا قصر نماز کی قضا مقیم ہونے کی صورت میں قصر ہی ادا کرنی ہوگی؟


سوال

کیا قصر کی قضا مقام پر پہنچنے پر بھی قصر ہوگی؟

جواب

اگر کسی کی ظہر، عصر یا عشاء کی نماز  سفرِ شرعی کی حالت میں قضا ہوئی ہو  تو اس کی قضا قصر ہی کی جائے گی، چاہے قضا سفر میں کرے یا حضر (اقامت کی حالت)میں کرے۔  اسی طرح سے حضر میں قضا ہونے والی نماز کی قضا مکمل نماز  کی صورت میں کرنی ہوگی چاہے قضا سفر میں کرے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200972

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے