بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1440ھ- 19 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

کیا عصر کے بعد قضا عصر پڑھی جا سکتی ہے؟


سوال

عصر اور عشاء کی نماز کی قضا کب کرنی چاہیے؟ سوال کا مقصد یہ ہے کہ جس طرح عشاء کی قضا وقتی عشاء نماز کے بعد کی جاتی ہے کیا اسی طرح وقتی عصر کے بعد عصر کی قضا کی جا سکتی ہے؟

جواب

واضح رہے کے عصر کی نماز کے بعد سے لے کر غروب آفتاب تک ہر طرح کے نوافل ادا کرنا منع ہے، البتہ اگر کوئی عصر کے بعد قضا نمازوں میں سے کوئی نماز ادا کرنا چاہتا ہے تو وہ سورج کے زردی مائل ہونے سے پہلے تک قضا پڑھ سکتا ہے، سورج کے زردی مائل ہوجانے کے بعد سے لے کر غروب آفتاب تک وقتی عصر کے علاوہ باقی کوئی نماز ادا نہیں کرسکتا۔  پس صورتِ مسئولہ میں عصر کی نماز کے بعد  سورج کے زردی مائل ہونے سے پہلے پہلے تک قضا نماز ادا کی جاسکتی ہے۔

البتہ عصر کی نماز کے بعد اگر قضانماز پڑھنی ہو تو گھر میں یا ایسی جگہ پڑھنی چاہیے جہاں لوگ نہ دیکھیں؛ اس لیے کہ عصر کے بعد نماز پڑھتا دیکھ کر لوگ سمجھ جائیں گے کہ یہ قضا نماز ہے، اور جان کر بلاعذر نماز قضا کرنا گناہ ہے، اور گناہ کا اظہار درست نہیں ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909202334

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے