بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

13 شوال 1440ھ- 17 جون 2019 ء

دارالافتاء

 

پرائز بانڈ اور بیمہ کا حکم


سوال

 پرائز بانڈ کے ذریعے انعام میں جیتی گئی رقم کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ نیز  انشورنس بیمہ پالیسی کروانا کیسا ہے؟

جواب

1۔  پرائز بانڈ پر ملنے والا انعام درحقیقت سود ہوتا ہے جسے لینا شرعاّ جائز نہیں، اگر زائد رقم انعام کے نام پر وصول کرلی ہو تو ثواب کی نیت کے بغیر مستحقِ زکاۃ پر صدقہ کر نا ضروری ہوگا۔

2۔ انشورنس یا بیمہ چوں کہ ’’جوا‘‘ اور ’’سود‘‘ پر مشتمل عقد ہے، اس وجہ سے ایسی کوئی بھی پالیسی حاصل کرنا شرعاً جائز نہیں۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144004200527

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے