بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 اکتوبر 2019 ء

دارالافتاء

 

وراثت کی زمین کا قبضہ چھڑانے میں ایک وارث کا رقم خرچ کرنا


سوال

والد کی زمینوں پر قبضہ کر لیا گیا تھا، والد کی وفات کے بعد بیٹا اپنے خرچ پر واگزار کرا لیتا ہے،  زمین ورثاء میں مشترکہ سمجھی جائے گی؟

جواب

صورتِ مسئولہ میں مذکورہ زمین والد ہی کی ملک سمجھی جائے گی اور  ان کے انتقال کے بعد ان کا ترکہ شمار ہوگا اور ان کے تمام شرعی ورثاء  میں شرعی حصص کے تناسب سے تقسیم ہوگی، البتہ ایک وارث(بیٹے)نے بقیہ ورثاء کی اجازت سے اس زمین کو  چھڑانے کے لیے جو رقم خرچ کی تھی ،وہ  دیگر ورثاء سے ان کے حصص کے مطابق اس رقم کی وصولی کا مطالبہ کرسکتے ہیں۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200562

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے