بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 18 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

نکاح کے بعد اور رخصتی سے قبل بات چیت اور میل ملاقات کا حکم


سوال

اگر لڑکی کا نکاح ہو جائے، لیکن ابھی رخصتی نہ ہوئی ہو تو کیا لڑکا اور لڑکی آپس میں فون پر اور آمنے سامنے بیٹھ کر بات کر سکتے ہیں؟  اس سے مراد غیر ضروری بات چیت ہے۔ نکاح ہونے کے بعد رخصتی سے پہلے میل ملاپ اور بات چیت کرنا جائز ہے یا نہیں؟

جواب

رخصتی سے پہلے بات چیت اور میل ملاپ جائز ہے،  مگرمشاہدہ میں آیا ہےکہ ایسا کرنا بسااوقات بڑے نقصان کا باعث بن جاتا ہے۔  فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144010200572

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے