بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 17 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

ناپاک کپڑے کے پاک حصہ کا پانی میں گرنے کا حکم


سوال

کیا فرماتے علمائے دین و شرع متین بیچ اس مسئلہ کے :

پانی کے بڑے گیلن (گیزر) بھرتے ہوئے خاتونِ خانہ کے ناپاک کپڑوں کی آستین کا ایک حصہ گیزر کے پانی کے ساتھ مل گیا۔ یاد رہے آستین کا عین وہ حصہ ناپاک نہیں تھا جو پانی میں گر گیا ہے۔ کیا اس گیزر کے پانی کے ساتھ وضو کرنا جائز ہے؟

جواب

اگر ناپاک کپڑے کی آستین کا وہ حصہ پانی میں گرا ہے جو حصہ پاک تھا تو اس سے پانی ناپاک نہیں ہوا، لہٰذا اس پانی سے وضو کرنا جائز ہے۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143908200914

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے