بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 19 جولائی 2019 ء

دارالافتاء

 

موبائل میں دیکھ کرتلاوت کرنے کا حکم، مصحف میں دیکھ کر تلاوت افضل ہے یا موبائل میں دیکھ کر؟


سوال

آج کل موبائل میں قرآن پاک انسٹال ہو جاتے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ موبائل پر تلاوت کرنا کیسا ہے؟ قرآن پاک پر تلاوت کرنے اور موبائل پر تلاوت کرنے میں ثواب میں کوئی فرق آئے گا کیا؟ کیا موبائل پر تلاوت بغیر وضو کے جائز ہے؟

جواب

موبائل میں دیکھ کر تلاوت کرنا جائز ہے، مصحف (قرآنِ پاک ) میں دیکھ کر تلاوت کرنا موبائل میں دیکھ کر تلاوت کرنے کے مقابلے میں زیادہ باعث برکت ہے، کیوں کہ مصحف شریف کو ہاتھوں میں ادب  واحترام سے پکڑنے کی فضیلت  موبائل میں حاصل نہیں ہوتی، البتہ نفسِ تلاوت کے ثواب میں کوئی فرق نہیں آئے گا۔

 وضو کے بغیر قرآنِ کریم کی تلاو ت  جائز ہے، لیکن قرآنِ کریم کو ہاتھ لگانا جائز نہیں ہے، اس لیے موبائل کی اسکرین پر اگر قرآن کریم  کھلا ہوا ہو تو اسکرین کو  وضو کے بغیر چھونا جائز نہیں ہے ، اس کے علاوہ  موبائل کے دیگر حصوں کو  مختلف  اطراف  سے چھونا جائز ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008201635

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے