بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 23 جولائی 2019 ء

دارالافتاء

 

مشکوک کپڑے دھوتے ہوئے ایک قطرہ ٹینکی میں گرجائے


سوال

مشکوک کپڑے دھوتے ہوئے ایک قطرہ کپڑوں سے پانی کی ٹینکی میں گر جائے تو اس پانی کا کیا حکم ہے، ٹینکی بھی بہت بڑی ہو؟

جواب

اگر کپڑوں کے ناپاک ہونے کا یقین نہیں ، محض شک ہے تو اس کا اعتبار نہیں، ٹینکی کا پانی پاک ہوگا۔

''ولو شك في نجاسة ماء أو ثوب أو طلاق أو عتق لم يعتبر، وتمامه في الأشباه''.

و في الرد : ''(قوله: ولوشك إلخ) في التتارخانية: من شك في إنائه أو في ثوبه أو بدن أصابته نجاسة أو لا فهو طاهر ما لم يستيقن، وكذا الآبار والحياض والجباب الموضوعة في الطرقات ويستقي منها الصغار والكبار والمسلمون والكفار، وكذا ما يتخذه أهل الشرك أو الجهلة من المسلمين كالسمن والخبز والأطعمة والثياب اهـ ملخصاً''.(رد المحتار 1/151) فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909200095

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے