بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

17 ذو الحجة 1440ھ- 19 اگست 2019 ء

دارالافتاء

 

مشت زنی یا ملاعبت کی وجہ سے انزال ہوجانے کی صورت میں روزے کا حکم


سوال

 روزہ کی حالت میں مشت زنی کرنے سے اور بیوی کے ساتھ کھیلنے سے اگر انزال ہو جائے تو روزہ کا کفارہ ہوگا یا نہیں اگر ہوگا تو کیا کفارہ ہے؟

جواب

مشت زنی ناجائز اور قابلِ لعنت فعل ہے، اس لیے روزہ ہویا نہیں، بہر صورت ناجائزہے۔ بہرحال مشت زنی یا بیوی کے ساتھ ملاعبت (کھیلنے) کی وجہ سے اگر انزال ہوجائے تو روزہ ٹوٹ جائے گا اور اس روزہ کی قضا لازم ہوگی، لیکن کفارہ لازم نہیں ہوگا، البتہ اس فعل پر توبہ و استغفار کرنا بھی لازم ہوگا۔ نیز جن لوگوں کو اپنے اوپر اعتماد نہ ہو ان کے لیے روزے کے دوران بیوی سے بوس وکنار/ ملاعبت مکروہ ہے؛ اس لیے روزے کی حالت میں ایسے لوگوں کو اجتناب کرنا چاہیے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (2/ 399):

"(قوله: وكذا الاستمناء بالكف) أي في كونه لا يفسد لكن هذا إذا لم ينزل أما إذا أنزل فعليه القضاء كما سيصرح به وهو المختار كما يأتي".

الفتاوى الهندية (1/ 204):

"وإذا قبل امرأته، وأنزل فسد صومه من غير كفارة كذا في المحيط .... والمس والمباشرة والمصافحة والمعانقة كالقبلة، كذا في البحر الرائق".فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200807

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے