بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 22 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

مسلمان ہونے سے قبل جسم پر بنوائے ٹیٹوز کا حکم


سوال

نیو مسلم کے جسم پر پہلے سے بنے ٹیٹو کا حکم کیا ہے؟

جواب

ٹیٹوز ختم کرانے کا طریقہ کار ایجاد ہوچکا ہے جس میں بذریعہ لیزر ٹیٹو ختم کیے جاتے ہیں؛ اس لیے  صورتِ مسئولہ میں اسلام لانے کے بعد ٹیٹوز جسم سے مٹوا دینے  چاہییں۔  البتہ اگر کسی جگہ یہ جدید سہولت میسر نہ ہو یا اس کے وسائل نہ ہوں اور شدید مشقت کے بغیر ٹیٹو ختم کرنا ممکن نہ ہو تو اللہ کے حضور صدقِ دل سے توبہ واستغفار کرتا رہے، اور جب سہولت میسر ہو انہیں زائل کروادے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 144008200539

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے