بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 21 ستمبر 2019 ء

دارالافتاء

 

قربانی کے جانور میں عقیقہ کرنا


سوال

 کیا قربانی کے جانور میں عقیقہ ہوسکتا ہے؟ اور کتنے حصے عقیقے کے لیے استعمال ہوسکتے ہیں ؟

جواب

قربانی کے بڑے جانور میں عقیقہ کی نیت سےحصہ ڈال سکتے ہیں، اس میں شرعاً   کوئی حرج نہیں، ایک بڑے جانور میں سات حصے ہوتے ہیں اس میں کوئی پابندی نہیں ہے کہ کتنے حصے قربانی کے ہوں اور کتنے عقیقہ کے، یہ قربانی کرنےوالے کی صواب دید پر موقوف ہے، بس اتنا خیال رہے کہ بڑے جانور میں سات حصے سے زیادہ کی اجازت نہیں ہے۔ فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201753

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن



تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں

ہماری ایپلی کیشن ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے