بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

- 23 مئی 2019 ء

دارالافتاء

 

چھ تولہ سونا اور ماہانہ خرچ کے چار ہزار پر قربانی کا حکم


سوال

میرے پاس 6 تولہ سونا موجود ہے، اس کے علاوہ کوئی نقد رقم موجود نہیں، صرف خرچ کے  لیے 2 سے 4 ہزار ماہانہ موجود ہے ،میرے لیے قربانی کا کیا حکم ہے؟

جواب

قربانی واجب ہونے کا نصاب وہی ہے جو صدقۂ فطر کے واجب ہونے کا نصاب ہے، یعنی جس عاقل، بالغ ، مقیم ، مسلمان  مرد یا عورت کی ملکیت میں قربانی کے ایام میں ساڑھے سات تولہ سونا، یا ساڑھے باون تولہ چاندی، یا اس کی قیمت کے برابر رقم ہو،  یا تجارت کا سامان، یا ضرورت سےزائد اتنا سامان موجود ہو جس کی قیمت ساڑھے باون تولہ چاندی کے برابر ہو، یا ان میں سے کوئی ایک چیز یا ان پانچ چیزوں میں سے بعض کا مجموعہ ساڑھے باون تولہ چاندی کی قیمت کے برابر  ہوتو ایسے مرد وعورت پر قربانی واجب ہے۔

لہذ ا اگر آپ کے پاس قربانی کے ایام (10، 11، 12 ذی الحجہ) میں چھ تولہ سونا کے ساتھ  2،4 ہزار نقد رقم ضرورت سے زائد ہو  (مثلاً:  واجب الادا بل ، گھر کا راشن ، قرض وغیرہ) منہا کرنے کے بعد بچی  ہو تو آپ پر قربانی لازم ہوگی، اور اگر قربانی کے ایام میں صرف چھ تولہ سونا ہو، اور اس کے علاوہ واجبات کو منہا کرنے کے بعد کوئی رقم نہ ہو تو آپ پر قربانی لازم نہیں ہوگی۔فقط واللہ اعلم


فتوی نمبر : 143909201385

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


تلاشں

کتب و ابواب

سوال پوچھیں

اگر آپ کا مطلوبہ سوال موجود نہیں تو اپنا سوال پوچھنے کے لیے یہاں کلک کریں، سوال بھیجنے کے بعد جواب کا انتظار کریں۔سوالات کی کثرت کی وجہ سے کبھی جواب دینے میں پندرہ بیس دن کا وقت بھی لگ جاتا ہے

سوال پوچھیں